ناشائستہ زبان کیس:الیکشن کمیشن نےعمران خان کی کی غیرمشروط معافی قبول کرلی

 چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 4 رکنی بنچ نے عمران خان، سابق وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک،سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق اور مولانا فضل الرحمان کے ناشائستہ زبان استعمال کرنےکےکیس کی سماعت کی۔ایاز صادق کے وکیل کامران مرتضیٰ نے مؤقف اپنایا کہ وہ اپنے مؤکل کی جانب سے دست بستہ معافی مانگتے ہیں۔اس موقع پر چیف الیکشن کمشنر کی ہدایت پر ایاز صادق کا ویڈیو کلپ چلایا گیا، چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیئے کہ دیکھیں ایاز صادق کہہ رہےہیں کہ الیکشن کمیشن کی اوقات کیا ہے، اس پر ایاز صادق کے وکیل نے ایک بار پھر معافی مانگی۔ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے وکیل بابر اعوان اور پرویز خٹک نے بھی ناشائستہ زبان کے استعمال پر الیکشن کمیشن سے معافی مانگی، مولانا فضل الرحمان کے وکیل نے بھی اپنے مؤکل کی جانب سے معذرت کی  جس پر چاروں رہنماؤں کے خلاف کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا گیا۔الیکشن کمیشن نے کچھ دیر بعد فیصلہ سناتے ہوئے چاروں رہنماؤں کی غیر مشروط معافی قبول کرلی اور مستقبل میں ایسی زبان استعمال نہ کرنے کی وارننگ دی ۔الیکشن کمیشن نے فیصلہ سنانے کے ساتھ ہی پرویز خٹک کی کامیابی کا نوٹی فکیشن بھی جاری کرنے کا حکم دے دیا ہے۔الیکشن کمیشن نے انتخابی مہم کے دوران عمران خان، ایازصادق، پرویز خٹک اور مولانا فضل الرحمان کے ناشائستہ زبان کے استعمال کا ازخود نوٹس لیا تھا۔ الیکشن کمیشن نے پرویز خٹک کی کامیابی کو ان کے کیس سے مشروط کررکھا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: