چیف جسٹس پاکستان نے دیامر میں سکولوں پر حملوں کا نوٹس لے لیا

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے گلگت بلتستان کے ضلع دیامیر میں لڑکیوں کے اسکولوں کو جلائے جانے کے واقعات پر ازخود نوٹس لیتےہوئے حکومت، سیکرٹری گلگت بلتستان افئیرز اور سکیرٹری داخلہ سے 48 گھنٹوں میں جواب طلب کرلیا ہے۔ دوسری جانب نگراں وزیراعظم ناصرالملک نے وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ محمد حفیظ کو ٹیلی فون کر کے واقعہ کی تفصیلات حاصل کیں اور تحقیقات میں پیشرفت سے آگاہ رکھنے کی ہدایت کی۔ ناصرالملک نے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بچوں کو تعلیم سے محروم رکھنے کی کوشش کسی صورت قابل قبول نہیں۔ گلگت بلتستان حکومت کے ترجمان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ واقعات میں ملوث 10مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔ آئی جی گلگت بلتستان پولیس ثناء الله عباسی کا کہنا ہے کہ ٹارگٹڈ آپریشن میں مقامی لوگ بھرپور تعاون کر رہے ہیں، جلد دیگر ملزمان کو بھی قانون کے کٹہرے میں لائیں گے۔ تعلیم دشمن عناصر کی کارروائی کے خلاف دیامر کے صدیق اکبر چوک پر شہریوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور اسے بچوں کے روشن مستقبل پر حملہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے واقعات افسوسناک اور ناقابل قبول ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: