گوئٹے مالا: آتش فشاں کے لاوےسے 110افراد ہلاک، سیکڑوں اب بھی لاپتہ ہیں

جس وقت فیوگو نامی یہ آتش فشاں پھٹا، پھل فروش ایوفیمیا گارسیا (Eufemia Garcia) سودا سلف لینے مارکیٹ گئی ہوئی تھیں،یہی وجہ ہے کہ وہ بچ گئیں۔اس خونی آتش فشاں میں گارسیا کی والدہ، بہن بھائی، بچے، پوتے، پوتیاں اور خاندان کے دیگر لوگوں سمیت 50 افراد لاپتہ ہوگئے، جن کی لاشوں کی تلاش میں وہ اب بھی ماری ماری پھر رہی ہیں۔گارسیا کے آنسو ہیں کہ تھمنے کا نام نہیں لیتے اور انہیں اب بھی امید ہے کہ ان کے پیارے زندہ ہیں اور واپس مل جائیں گے۔واضح رہے کہ فیوگو آتش فشاں پھٹنے سے کم از کم 110 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ اس آتش فشاں سے نکلنے والا لاوا، راکھ اور دھواں اس قدر شدید تھا کہ قیاس کیا جارہا ہے کہ سیکڑوں افراد لاوے تلے دفن ہوچکے ہیں۔آتش فشاں سے ہونے والی تباہی 1974 کے بعد سے شدید ترین ہے، جس سے نکلنے والے لاوا نے قریبی علاقوں میں شدید تباہی مچائی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: