3دہائیوں تک چڑیا گھر میں تفریحی فراہم کرنے والی واحد ہتھنی چل بسی

لاہور چڑیا گھر میں رہنے والی سوزی گزشتہ ایک ہفتے سے بیمار تھی اور وہ ٹانگو میں درد ہونے کی وجہ سے مسلسل بیٹھی رہتی تھی ۔آج صبح 35برس کی عمر میں سوزی کا انتقال ہو گیا جس کے باعث چڑیاگھر جانے والے بچے اور بڑے افسردہ ہو گئے ۔سوزی کی لاش کا پوسٹمارٹم کرا یا جائے گا تا کہ اس کی موت کی حتمی وجہ معلوم ہو سکے ۔عام طور پر ہاتھیوں کی طبی عمر 30سے 35سال کے درمیان ہی ہوتی ہیں اور خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ سوزی بھی طبی موت مری ہے ۔لاہور چڑیاگھر میں سوزی کی کمی کے بعد بچے اور بڑے سب افسردہ ہو گئے ہیں کیو نکہ چڑیا گھر میں موجود واحد ہتھنی بچوں سے پیسے پکڑتی تھی اورفٹبال کھیلتی تھی جسے دیکھ کر بچوں کے ساتھ ساتھ بڑے بھی خوش ہوتے تھے

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: