قومی سلامتی کمیٹی نے نواز شریف کے بیان کو متفقہ طور پر مسترد کر دیا

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس 2 گھنٹے جاری رہا۔ اجلاس میں وفاقی وزراء، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات سمیت بحری اور فضائی افواج کے سربراہان شریک ہوئے۔ اجلاس میں مشیر قومی سلامتی ناصر جنجوعہ، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار، ڈی جی انٹیلی جنس بیورو سیلمان خان، ڈی جی ملٹری آپریشنز میجر جنرل ساحر شمشاد مرزا اور اعلیٰ سول و عسکری حکام بھی شریک تھے۔ اجلاس میں ممبئی حملوں سے متعلق نواز شریف کے بیان کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس کے اعلامیہ کے مطابق شرکاء نے نواز شریف کے بیان کو مکمل طور پر غلط اور گمراہ کن قرار دیا گیا۔ اجلاس کے اعلامیہ میں کہا گیا کہ افسوس اور بدقسمتی ہے کہ حقائق کو شکایت کے اندازمیں غلط بیان کیا گیا۔ اس اخباری بیان میں ٹھوس شواہد اور حقائق کو نظر انداز کیا گیا۔ بھارت کی جانب سے اجمل قصاب تک رسائی سے انکار کیا گیا۔ اعلامیہ میں مزید کہا گیا کہ اخباری بیان میں ٹھوس شواہد اور حقائق کو نظر انداز کیا گیا۔ قومی سلامتی کمیٹی نے نواز شریف کے بیان کی سختی سے مذمت کی اور لگائے گئےالزامات کو متفقہ طور پر سختی سےردکردیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: