تھر پار کر میں زندگی تھر تھر کانپنے لگی

ملک میں حکومت بدل گئی مگر تھر والوں کی قسمت نہ بدلی، تھرپارکر میں غذائی قلت اور وبائی مراض کے باعث مزید دو پھول مرجھاگئے۔ جاں بحق ہونے والوں میں دو سالہ بچی دھنا محمد خان اور کھیموں مل کا نومولود بچہ شامل ہے، جس کے بعد رواں ماہ جان کی بازی ہارنے والوں کی تعداد 15 ہوگئی جبکہ ہر سال کی طرح رواں سال بھی درجنوں بچے بلک بلک کر ابدی نیند سوگئے۔ تھر میں ناکافی سہولیات کے باعث سینکڑوں بچے مختلف ہسپتالوں میں زیرعلاج ہیں۔ دوسری جانب بھوک اور افلاس سے رنگ  22 سالہ خاتون نے موت کو گلے لگالیا۔ خودکشی کرنے والی خاتون کا نام ریشماں معلوم ہوا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: