ٹرمپ صدر نہ ہوتے تو واشنگٹن سے تعلقات بدترین ہوتے،پیوٹن

ماسکو میں توانائی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ولادی میر پیوٹن کا کہناتھاکہ امریکی صدر نے 2016 کے انتخابات میں روس سے کوئی سمجھوتہ یا سودے بازی نہیں کی لیکن ماسکو آج بھی ٹرمپ کو اہمیت دیتاہے۔ اگر ڈونلڈ ٹرمپ امریکا کے صدر نہ ہوتے تو واشنگٹن اور ماسکو کے تعلقات بدترین صورتحال سے گزر رہے ہوتے۔ پیوٹن نے انتباہ کیا کہ امریکی صدارتی انتخاب میں روسی مداخلت کے الزام پر امریکی رہنما صبر و تحمل سے کام لیں۔ روس نے کبھی امریکی جمہوری نظام میں مداخلت نہیں کی۔ اگر امریکی رہنما اپنی ضد پر اڑے رہے تو دونوں ملکوں کے تعلقات مزید خراب ہوسکتے ہیں۔ آج یا کل امریکا اور روس کو تعلقات ضرور بحال کرنا ہوں گے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: