تین فیصد بلاکس میں دوبارہ مردم شماری کرانے کی سفارش

حالیہ مردم شماری کے نتائج پر اٹھنے والے اعتراضات کے حوالے سے چیئرمین سینٹ میاں رضا ربانی کی ہدایت پر شماریات ڈویژن کے حکام نے سینٹ کے تمام اراکین کو مردم شماری کے طریقہ کار، نتائج بارے تفصیلی بریفنگ دی۔ چیف شماریات آصف باجوہ نے بتایا مشترکہ مفادات کونسل کی ہدایت پر فوج کی نگرانی میں مردم شماری کرائی گئی۔ مردم شماری میں ہر فرد کو شمار کیا گیا ہے چاہے وہ پاکستانی تھا یا غیر ملکی۔انہوں نے بتایا کہ 2017 کی مردم شماری کے مطابق پاکستان کی آبادی 20 کروڑ 70 لاکھ ہے۔ شرح پیدائش 2.4 فیصد ہے۔ اگر شرح پیدائش یہی رہی تو 2050 میں پاکستان کی آبادی ڈبل ہوجائے گی۔ ہمارے نتائج اور فوج کے نتائج میں کوئی فرق نہیں ہے۔ کمیٹی ارکان نے شماریات ڈویژن کی طرف دی گئی بریفنگ پر عدم اطمینان کا اظہار کیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.