امریکا سے امداد نہیں دوستانہ تعلقات چاہتےہیں، پاکستان نےواضح کردیا

واشنگٹن میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ نے واضح کردیاکہ پاکستان کی سیکیورٹی کو نظرانداز کرکےامریکی تقاضے پورے نہیں کئے جاسکتے، دہشت گردی کےخلاف سب سے زیادہ پاکستان نے نقصان اٹھایا ہے.

انہوں نے کہا کہ افغانستان کا امن پاکستان کیلئے اہم ہے، افغان امن کوششوں میں ہم سے زیادہ کسی کا کردار نہیں، پاکستان اور امریکا مل کر افغانستان میں اچھا کردار ادا کرسکتے ہیں۔

احسن اقبال نے کہا کہ سی پیک جنوبی ایشیا اور چین کو مضبوط کرنے کیلئے ہے، اقتصادی راہداری خطے کیلئے گیم چینجر ثابت ہوگی، منصوبے کی مخالفت پر بھارت کو اندر سے تنقید کا سامنا ہے۔

احسن اقبال نے ملکی سیاسی صورتحال کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ پیپلزپارٹی نے آج تک بھٹو کی پھانسی کا فیصلہ قبول نہیں کیا، ہم نے نوازشریف کی نااہلی فیصلے کی سیاہی خشک ہونے سے پہلے قبل کرلی، وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اس فیصلے سے سپریم کورٹ کا وقار دنیا بھر میں مجروح ہوا۔

اس سے قبل برطانوی نشریاتی ادارے کو انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان کو حکومت اور پوری قوم نے سنجیدگی سے لیا اور بھرپور انداز میں جواب بھی دیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: