احتساب عدالت کو فرد جرم عائد کرنے سے روکنے کیلئے کیپٹن صفدر کی درخواست خارج

سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد اور رکن قومی اسمبلی کیپٹن (ر) صفدر نے نیب ریفرنس کے سلسلے میں احتساب عدالت کی جانب سے فرد جرم عائد کرنے کی تاریخ مقرر کرنے کے حکم نامے کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کیا۔ کیپٹن صفدر نے اپنے وکیل امجد پرویز کے ذریعے درخواست دائر کی، جس میں استدعا کی گئی کہ احتساب عدالت کو 13 اکتوبر کو فرد جرم عائد کرنے سے روکا جائے۔درخواست میں کہا گیا کہ قانون کے مطابق فرد جرم کے لیے 7 دن کا وقت دیا جاتا ہے جبکہ احتساب عدالت نے صرف 4 دن بعد فرد جرم عائد کرنے کی تاریخ مقرر کی، لہذا احتساب عدالت کے حکم نامے کو معطل کیا جائے کیونکہ 7 دن سے پہلے فرد جرم عائد کرنا آرٹیکل 265 سی کی خلاف ورزی ہے۔ درخواست میں وفاق، نیب اور احتساب عدالت کے جج کو فریق بنایا گیا ہے۔ عدالت نے درخواست ناقابل ضمانت قرار دیتے ہوئے خارج کر دی۔ احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر پر فردِ جرم عائد کرنے کیلئے 13 اکتوبر کی تاریخ مقرر کر رکھی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.