مسلم لیگ (ق)کے صدرچودھری شجاعت حسین کا کہناتھا کہ نواز شریف کو سپریم کورٹ سے کلین چٹ نہیں ملی،جے آئی ٹی سے ہمیں انصاف کی توقع نہیں

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چودھری شجاعت کا کہناتھا کہ 5 فاضل ججوں میں سے کسی نے بھی نواز شریف کو صادق و امین قرار نہیں دیاجبکہ بنچ میں موجود 2سینئر ججز نے صادق و امین نہ ہونے پر نا اہل قرار دیا۔ان کا کہناتھا کہ موجودہ فیصلہ کی روشنی میں وزیراعظم کے پاس اقتدار میں رہنے کا کوئی جواز نہیں کیونکہ وہ صادق و امین نہیں رہے اور دو ججوں کا فیصلہ ہی پوری سپریم کورٹ کا فیصلہ اور قوم کے دل کی آواز ہے، چودھری شجاعت حسین کامزید مزیدکہناتھا کہ جن اداروں پر سپریم کورٹ دوران ٹرائل عدم اعتماد کا اظہار کرتی رہی اور جن کی کارکردگی پر سوالیہ نشان اٹھائے جاتے رہے انہی پر مشتمل جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم سے انصاف کی توقع نہیں، انصاف کے تقاضے پورے کرنے کیلئے وزیراعظم فوری طور پر استعفیٰ دیں۔ ان کا کہناتھا کہ وزراءنے آرڈر پڑھا ہی نہیں اور مٹھائیاں تقسیم کیں اور نعرے لگائے، ان کا کہناتھا کہ عمران خان کی مسلسل کاوشوں اور جدوجہد کے باعث پانامہ کیس کا ایشو زندہ رہا اور اس کا کریڈٹ ان کو جاتا ہے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.