ریٹائرمنٹ کے بعدتعلیمی میدان میں خدمات سر انجام دوں گا:چیف جسٹس

سپریم کورٹ کا دورہ کرنے والے نجی یونیورسٹی کے طلباءکے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ سیاسی مقدمات میں تمام فریقین نے عدالتی دائرہ اختیارتسلیم کیا۔ سپریم کورٹ سمیت تمام عدالتیں آئین اور قانون کی پاسدار ہیں، عدلیہ کو برا بھلا کہنے والوں کے معاملے کو ذاتی حیثیت میں نہیں دیکھ رہے، اس حوالے سے قانون خود      اپنا   راستہ لے گا۔ چیف جسٹس ثاقب نثار کا مزید کہنا تھا کہ عدالت نے آج تک جتنے بھی ازخود نوٹسز لئے وہ عوام کے بنیادی حقوق سے متعلق ہیں، کبھی کسی سیاسی مقدمے پر ازخود نوٹس نہیں لیا گیا کیونکہ بنیادی حقوق کا تحفظ کرنا عدلیہ کی ذمہ داری ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ میرے سیاسی عزائم ہرگز نہیں ہیں، ریٹائرمنٹ کے بعد نہ تو سیاست میں آؤں گا، وکالت بھی نہیں کروں گا بلکہ تعلیمی میدان میں اپنی خدمات     سرانجام    دوں گا۔ انہوں نے کہا کہ عام انتخابات اپنے مقررہ وقت پر ہی ہوں گے، شفاف انتخابات کی ضمانت دیتے ہیں، عدالتی بنیادی اصلاحات کے لئے کام شروع کردیا ہے، عدالتی اصلاحات نافذ کریں گے عوام کو جلد تبدیلی نظرآئے گی۔

 

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: