پاکستان چین سے بحری جہاز اور8 آبدوزیں خریدے گا: چینی اخبار

چین پاکستان کو ہتھیار برآمد کرنیوالے بڑے ممالک میں سے ایک ہے جبکہ چینی فوجی ہتھیاروں کی تجارت میں بھی مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔  پاکستان نے حال ہی میں چین سے بحری جہاز حاصل کرنے کے ایک سودے پر دستخط کئے ہیں ۔ جبکہ پاکستان چین سے 8 آبدوزیں خریدنے کا بھی منصوبہ بنارہا ہے، ایک رپورٹ کے مطابق امریکہ دنیا بھر میں کم از کم 100ممالک کو اسلحہ فروخت کرتا ہے۔ امریکہ کے فوجی اسلحہ کے مقابلے میں چینی اسلحہ قیمت میں بھی کم ہے اور بعد از فروخت سروس فراہم کرنے میں بھی چینی زیادہ سہولت دیتے ہیں۔اس لئے چین کی ساکھ بہتر ہے۔دفاعی ماہر لی نے مثال پیش کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے بھارت کو ایف 16طیارے فروخت کئے جو قیمت میں بھی زیادہ تھے اور وہ زائد المیعاد بھی تھے۔ چین پاکستان کو جو جدید ترین ہتھیار اور آبدوزیں فروخت کررہا ہے۔ یہ آبدوزیں چین نے خود ڈیزائن کی ہیں، چینی ہتھیاروں کی کارکردگی بھی امریکی اور روسی ہتھیاروں کے مقابلے میں بہتر رہی ہے۔چین کا جے۔10ہوائی جہاز امریکہ کے ایف 16سے کمتر ہو سکتا ہے تا ہم چین کا ہانگ کی میزائل دفاعی نظام امریکہ کے پیٹریاٹ میزائل کا مقابلہ کرسکتا ہے۔گزشتہ پانچ برسوں کے دوران چینی ہتھیاروں کی عالمی تجارت میں 6.2فیصد کا حصہ بڑھ کر 74فیصد تک پہنچ گیا ہے،امریکی جریدے نیشنل انٹریسٹ نے اپنی 27ستمبر کی اشاعت میں کہا تھا کہ چینی ہتھیاروں کی برآمد جرمنی ، فرانس اور برطانیہ تک ہورہی ہے اور اب یہ دنیا کو ہتھیار برآمد کرنیوالا تیسرا سب سے بڑا ملک ہے۔ اب وہ دوسرے ممالک کو آبدوزیں اور ہوائی جہاز بھی برآمد کررہا ہے جن میں جنگی طیارے جے۔20بھی شامل ہیں۔  یہ سٹیلتھ جنگی طیارے چین نے خود تیار کئے ہیں اور وہ اس کی افواج میں خدمات انجام دے رہے ہیں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.