کراچی:سٹی کورٹ مال خانے میں آگ لگنےکا معاملہ تاحال نہ سلجھ سکا

کراچی: جوڈیشل مجسٹریٹ کے روبرو ایس ایچ او سمیت 20 سے زائد اہلکاروں کے بیانات قلمبند ہوئے ۔ بیان دینے والوں میں مال خانے کے 4 اہلکار بھی شامل تھے ۔اہلکاروں نے اپنے بیان میں کہا کہ ہم مال خانہ بند کرکے چلے گئے تھے، اُس کے بعد کیا ہوا ہمیں اس کا کچھ علم نہیں جبکہ تفتیش کےدوران عدالتی چوکیداروں نے بھی لاعلمی کا اظہار کردیا اور کے علاوہ سکیوریٹی پر معمور پولیس اہلکار بھی وجوہات نہ بتا سکے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اُس وقت پتہ چلا جب آگ لگی دیکھی۔ عدالت کے روبرو کل سٹی کورٹ میں تعینات حساس اداروں کے نمائندوں کے بیانات بھی قلم بند کیے جائیں گے۔9اور10اپریل کی رات سٹی کورٹ کے مال خانے میں خوفناک آگ لگنے کے نتیجے میں دھماکہ خیز مواد راکٹ لانچر، بموں اور منشیات سمیت اہم مقدمات کا سامان جل کر تباہ ہوگیاتھا۔ اس سےقبل بھی مال خانےمیں 3 بارآگ لگ چکی ہے جس وجہ شارٹ سرکٹ بتائی گئی تھی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: