لاہور:شیخوپورہ روڈ، جوس فیکٹری پر فوڈ اتھارٹی کا چھاپہ

ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل نے شیخوپورہ روڈ پر مغل سٹیل کے قریب واقع فیکٹری پر چھاپہ مارا۔ان کا کہنا تھا کہ تمام قسم کے فروٹ جوس بنانے والی کمپنی زیادہ تر برانڈز میں فروٹ پلپ سرے سے استعمال ہی نہیں کر رہی تھی۔ موقع پر تمام جوسز کے ٹیسٹ کیے گیے، تمام ٹیسٹ فیل ہوئے۔سٹور میں رکھے پلپ ٹینک کے اندر بے تحاشہ مکھیاں اور کیڑے مرے ہوئے پائے گئے۔نورالامین مینگل نے کہا ہے کہ بچوں میں کافی معروف جوسز ایسی حالت میں تیار کرنا سنگین جرم ہے۔ ملاوٹ کی یہ سب سے گھناؤنی قسم  ہے جس سے ہمارے بچے سب سے ذیادہ متاثر ہوتے ہیں۔ایسے جوس اور ڈرنکس سے بچوں میں جگر، معدے کے السر، کینسر اور انتڑیوں کی بیماریاں پیدا ہوتی ہیں۔ والدین سے گزارش ہے کہ بچوں کو بالخصوص قدرتی اجزا سے بنی غذا اور فروٹ جوس خود بنا کر دیں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.