عمران خان نے جھاڑو اٹھالی،کچرا بھی چنتے رہے

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے وفاقی دارالحکومت کے مقامی کالج میں پودا لگا کر کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کا آغاز کردیا ۔وزیر اعظم عمران خان نے مقامی کالج میں پودا لگا کر کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کا آغاز کیا جس کے بعد وہ طالبات میں گھل مل گئے اور ان سے سوال و جواب کرتے رہے۔عمران خان نے طالبات سے گلوبل وارمنگ کے حوالے سے سوالات بھی کیے اور طالبات کو بتایا کہ پاکستان کو درختوں کی سخت ضرورت ہے کیونکہ گلوبل وارمنگ سے متاثرہ ممالک میں پاکستان ساتویں نمبر پر ہے۔ درجہ حرارت بڑھنے

سے سیلاب آئیں گے اس لیے درخت بڑھنے سے زیر زمین پانی کی سطح اوپر آئے گی ۔ طالبات سے گفتگو کے علاوہ عمران خان نے کالج کے گراؤنڈ میں جھاڑو بھی لگائی جبکہ طالبات کے ساتھ مل کر کچرا بھی چنتے رہے۔بعد ازاں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ یورپ میں کوئی گندگی نہیں، ہم اپنے ملک میں گندگی پھیلاتے ہیں، دریا گندے کرتے ہیں، لاہورمیں آلودگی کا لیول سب سے زیادہ ہے، ہم اپنے بچوں کی صحت اور مستقبل تباہ کررہے ہیں، آلودگی سے انسان کی زندگی کے گیارہ سال کم ہوتی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہم گلوبل وارنگ کا شکار ممالک میں سب سے آگے ہیں، ہم نے کے پی کے میں بلین ٹرین سونامی میں ایک ارب درخت لگائے، اب پانچ سال میں 10 ارب درخت لگانے کا ہدف ہے، اس کا مطلب ہے کہ ملک کا سارا موسم پیٹرن تبدیل ہوسکتا ہے اس سے بارشیں زیادہ ہوں گی۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پانچ سال بعد کا پاکستان یورپ سے زیادہ صاف ہوگا۔یاد رہے 8 اکتوبر کو وزیراعظم عمران خان نے کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کاافتتاح کیا اور کہا تھا کہ یہ مہم صرف حکومت کامیاب نہیں بنا سکتی سب کو کردار ادا کرنا ہے، پاکستان قدرت کا تحفہ ہے، بدقسمتی سے ہم نے اس کی خوبصورتی پرتوجہ نہیں دی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: