بچے کی ہلاکت کیخلاف لواحقین کااحتجاج،والد کو دل کا دورہ پڑ گیا

نواز شریف کی ریلی میں تعداد گاڑیاں شامل ہیں جن میں سابق وزیراعظم کے پروٹول کی گاڑیاں بھی موجود ہیں ۔ گجرات میں داخلے کے وقت ایک ناخوشگوار واقعہ رونما ہواجب نواز شریف کے قافلے میں شامل ایلیٹ فورس کی ایک تیز رفتار گاڑی نے 12سالہ لڑکے کو بری طرح  کچل دیا جس سے وہ تڑپ تڑپ کر موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا۔ سابق وزیر اعظم کے سیکیورٹی سکواڈ میں شامل کسی گاڑی نے رک کر اس کا حال پوچھنے کی بھی زحمت گوارا نہیں کی۔ جاں بحق لڑکے کی شناخت حامد کے نام سے ہوئی ہے اور وہ گجرات کی تحصیل لالہ موسیٰ کے محلہ رحمت آباد کا رہائشی تھا۔ مرنے والے لڑکے کے چچا اور واقعہ کے عینی شاہد کا کہنا ہے کہ میرے بھتیجے کو کچلنے والی گاڑی کا نمبر265 ہے اور حامد سے گاڑی کاایک ٹائر گزرنے پرگاڑی کو رکنے کا کہا لیکن ڈرائیورنے روکنے کی بجائے دوسراٹائر اس کے سر سے گزاردیا۔دوسری جانب وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ کا کہنا ہے کہ معاملے کی مکمل انکوائری کرائی جائے گی۔بعدازاں بچے کی ہلاکت پر لواحقین نے جی ٹی روڈ پر شدید احتجاج کیا۔احتجاج کے دوران جاں بحق بچے کے والد دل کو دل کا دورہ پڑ گیا،جنہیں طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔دوسری جانب وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ کا کہنا ہے کہ اسکواڈ کی گاڑیاں پیدل سپیڈ کے مطابق چلتی ہیں،گاڑی ٹکرانے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،بچے کو کچلنے والی گاڑی کس کی ہے؟انکوائری کا حکم دے دیا ہے

 

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.