مولانافضل الرحمان کاآرٹیکل 63، 62 کےخاتمےکی مخالفت کا اعلان

پارلیمنٹ ہاوس میں میڈیا سےغیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے مولانافضل الرحمان نے کہا کہ ان شقوں کوختم کرنےکی کوشش ملک کوسیکولرازم کی طرف دھکیلنے کی کوشش تصور کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ صادق و امین اور دینی علوم کا علم رکھنے والا کون ہے؟ آئین میں صادق اور امین کی تشریح کرنا ہوگی تاہم یہ  آرٹیکل  ہر صورت برقرار رہنے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا کام قانون کے غلط استعمال کوروکنا ہے، نہ کہ اس کو  ختم کرنا۔ انہوں نے ذوالفقارعلی بھٹو کے قتل کو جمہوریت کا قتل قرار دیتے ہوئے کہا کہ ماضی کی غلطیوں کو نہیں دہرانا چاہیے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.