قومی اسمبلی میں انسانی اعضا کی پیوند کاری کا ترمیمی بل منظور

ڈپٹی اسپیکرمرتضیٰ عباسی کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا، اس موقع پر انسانی اعضاء کی پیوند کاری سے متعلق ترمیمی بل دوہزار سترہ پیش کیا گیا، بل ایم کیوایم کی رکن اسمبلی کشور زہرا کی جانب سے پیش کیا گیا، اس کےعلاوہ بابر نواز نے بھی انسانی اسمگلنگ کی روک تھام سے متعلق بل دوہزار سترہ میں قومی اسمبلی میں پیش کیا، اس دوران حکومتی رکن ماروی میمن کی جانب سے بھی تیزاب اور آگ سےجلانےکےجرائم سےمتعلق سمیت چھ سےزائد بل قومی اسمبلی میں پیش کئےگئے۔ اس موقع پر انسانی پیوند کاری اور اسمگلنگ سے متعلق بل کو متفقہ طور پر منظورکیا گیا جبکہ ماروی میمن کی جانب سے پیش کئے گئے  تیزاب اور آگ سےجلانے کے جرائم سے متعلق بل کو موخر کردیا گیا ہے۔ اس موقع پراحتجاج کرتے ہوئے ماروی میمن نے کہا کہ میں چھ بل لائی تمام مسترد کردیئے گئے، یہ سراسر ناانصافی ہے۔ قومی اسمبلی کےاجلاس کے موقع پر پی ٹی آئی کی رکن قومی اسمبلی شیریں مزاری نےاظہارخیال کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے وزیر خارجہ کی جانب سے حقانی نیٹ ورک کے خلاف مشترکہ آپریشن کی امریکی پیشکش پر وزیر خارجہ ایوان میں وضاحت دیں۔ شیریں مزاری نے کہا کہ امریکا کی پارٹنرشپ بھارت کے ساتھ ہے اور وزیر خارجہ خواجہ آصف نے پاکستانی سرزمین پرامریکاکومشترکہ آپریشن کی پیشکش کیسےکردی۔تحریک انصاف کی رکن اسمبلی نے کہا کہ امریکا ہمیں مسلسل دھمکیاں دے رہا ہے۔ وزیر خارجہ خواجہ آصف کو اپنے بیان پر وضاحت پیش کرنا ہو گی۔ اس موقع پر ڈپٹی اسپیکر مرتضیٰ جاوید عباسی نے وزیر خارجہ سے جواب مانگنے کے لئے پارلیمانی امور کے وزیر شیخ آفتاب کی ڈیوٹی لگا دی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.