مجھے سپریم کورٹ کی جانب سے اسی قسم کے فیصلے کی توقع تھی، نواز شریف

جاتی عمرامرا میں نواز شریف کا کارکنوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کارکن ابھی صبر و استقامات کا مظاہرہ کریں اور پارٹی قیادت کی کال کا انتظار کریں۔انہوں نے کہا کہ حالات کا مقابلہ متحد ہو کر کریں گے ،ماضی میں بھی رکاوٹیں کھڑی کی جاتی رہیں لیکن ہم نے مقابلہ کیا ۔نواز شریف کا کہنا تھا کہ  اس قسم کے فیصلوں سے ظاہر ہوتا ہے کہ میں ہدف ہوں ،ایسے فیصلوں کے ذریعے عوام سے ان کی قیادت نہیں چھینی جا سکتی۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے آ رٹیکل 62ون ایف کے تحت سزا پانے والے امید واروں کو تا حیات نا اہل قرار دے دیا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: