سپریم کورٹ کا5رکنی بینچ آج نظرثانی درخواستوں کی سماعت کرےگا

چیف جسٹس سپریم کورٹ نےسابق وزیراعظم نوازشریف،بچوں اور داماد کیپٹن صفدرکی نظرثانی درخواستوں کی سماعت کےلیےپانچ رکنی لارجربنچ تشکیل دےدیا، جسٹس آصف سعید کھوسہ بنچ کےسربراہ ہوں گے۔

پاناما فیصلےکےخلاف نظرثانی درخواستوں کی ابتدائی سماعت کل ہوئی جس میں شریف خاندان کی پانچ رکنی لارجربنچ بنانےکی استدعا منظور کرلی گئی جس کےبعد چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے5 رکنی بنچ تشکیل دے دیا ہے۔

بنچ جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں تشکیل دیا گیا ہے۔ جسٹس اعجازافضل، جسٹس گلزار احمد، جسٹس شیخ عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن بھی بنچ میں شامل ہیں۔ بنچ نظر ثانی درخواستوں پر سماعت آج کرےگا۔

اس سےقبل تین رکنی بنچ نےنوازشریف اوربچوں کی نظرثانی درخواستوں کی سماعت کی۔ بچوں کے وکیل سلمان اکرم راجا نےدلائل میں کہا تھا کہ پانچ رکنی بنچ کے فیصلے کیخلاف نظرثانی درخواست پر پہلے سماعت کی جائے۔ جسٹس اعجاز افضل نے ریمارکس دیئے کہ 28 جولائی کی فیصلہ کن ججمنٹ تین رکنی بینچ کی ہے، تین رکنی بنچ اگر اپنا فیصلہ تبدیل کر لےتو پانچ رکنی بینچ کا فیصلہ بھی تبدیل ہو جائےگا۔

نوازشریف کےوکیل خواجہ حارث نےکہا کہ اصل فیصلہ پانچ رکنی بنچ کاہےجس پرسب ججز نےدستخط کئے اور اسی فیصلےپر ہی عملدرآمد کیاگیا۔عدالت نے دلائل سننے کے بعد لارجر بنچ کی تشکیل کیلئے معاملہ چیف جسٹس آف پاکستان کو بھجوا دیا تھا۔

چیف جسٹس نےتین رکنی بنچ کی سفارش کومنظورکرتےہوئےنظر ثانی درخواستوں پر پانچ رکنی بنچ تشکیل دے دیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.