جہانگیر ترین نے سپریم کورٹ میں نااہلی کےخلاف نظر ثانی کی درخواست دائر کردی

جہانگر ترین: جہانگر ترین نے اپنے بیان حلفی میں کہا ہے کہ کاغذات نامزدگی میں ارادتاً یا جان بوجھ کر اثاثے چھپانے کی کوشش نہیں کی، ٹرسٹ کے قیام کا مقصد بچوں کو برطانیہ میں گھر کی فراہمی تھا، خود کو اور اپنی بیوی کو تاحیات بینیفیشری بنانا محض حفاظتی اقدام تھا۔ حلف نامے میں مزید کہا گیا کہ ٹرسٹ پاکستان کے بینکنگ چینلز سے واجبات کی منتقلی کے ذریعے قائم کیا، میرے چار بچے ہیں اور چاروں شادی شدہ اور خود مختار ہیں۔ بیان حلفی میں استدعا کی گئی کہ عدالت اپنے فیصلے پر نظرثانی کرے۔خیال رہے چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے 15 دسمبر 2017 کو جہانگیر ترین کو اثاثے چھپانے پر نا اہل قرار دیا تھا

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: