سندھ اسمبلی: 28 کروڑ 83 لاکھ سے زائد کے مطالبات زر منظور

سندھ اسمبلی کا اجلاس اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی زیرصدارت شروع ہوا۔ گورنر سیکریٹریٹ اور سندھ اسمبلی نے 28 کروڑ 83 لاکھ سے زائد کے مطالبات زر کی منظوری دے دی۔ اپوزیشن کی 40 سے زائد کٹوتی کی تحاریک کو کثرت رائے سے مسترد کردیا گیا۔ایم کیو ایم کے رکن سیف الدین نے وزیراعلی سندھ کو ڈیل کی پیش کش کی جس پر وزیراعلٰی سندھ نے ایم کیو ایم رکن کو جواب دیا کہ یہ ایوان ہے کوئی نیلام گھر نہیں جو ڈیل کی جائے۔

اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے سیف الدین خالد سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آج تو آپ لیپ ٹاپ کے ساتھ وائی فائی بھی لگ رہے ہیں۔ لگتا ہے خواجہ اظہارالحسن نے آپ کی تربیت اچھی کی ہے لیکن آپ کے کٹ موشن تو مسترد ہورہے ہیں۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ اگر میں بتاؤں گا نہیں تو آپ سیکھیں گے نہیں۔

خواجہ اظہار الحسن نے وزیراعلٰی سندھ کو جواب دیا کہ غلطیوں کی نشاندہی کی مہربانی، آئندہ سال آپ لوگوں کو کٹ موشن پیش کرنے ہیں۔ وزیراعلٰی سندھ نے کہا کہ جب تک آپ مکمل سیکھ نہیں جاتے اس وقت آپ سے ہی یہ کام لیا جائے گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.