سندھ حکومت اور آئی جی میں کشیدگی سے پولیس کا نظام درہم برہم

ایڈیشنل آئی جی کراچی اورڈی آئی جیز سمیت کئی اہم سیٹوں پر براجمان پولیس افسران سندھ حکومت کی ٹیم میں جبکہ چند ایک ایسے افسران جو وفاقی حکومت سے اچھے تعلقات چاہتے ہیں وہ آئی جی سندھ کی ٹیم میں شامل ہیں ،سندھ حکومت اور پولیس افسران کے اختلافات کے باعث افسران بالا نے تھانوں کی طرف توجہ کم کر دی ہے جس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ایس ایس پی اور ایس پی کی سطح کے افسران نے مبینہ طور پر شہر بھر میں جوئے اور منشیات کے اڈے آباد کرانے کی پشت پنائی  بھی شروع کردی۔ ذرائع نے بتایا کہ اس وقت پورے شہر میں 150 سے زائد جوئے اور منشیات کے اڈے علاقہ پولیس کی مبینہ اجازت سے کام کر رہے ہیں جبکہ شراب اور دیگر غیر قانونی کام بھی کرائے جا رہے ہیں ، پولیس ذرائع نے بتایا کہ سب سے زیادہ جوئے اور منشیات کے اڈے ضلع ملیر کے تھانے شاہ لطیف ، قائد آباد ، ملیر سٹی ، سکھن ، اسٹیل ٹاؤن سمیت دیگر تھانوں میں ہیں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.