قصورمیں ننھی زینب کی نمازجنازہ،ہرآنکھ اشکبار

قصور کے علاقے روڈ کوٹ سے چار روز قبل اغواء کی جانے والی سات سالہ بچی زینب کی لاش برآمد ہوئی تھی، جسے مقامی قبرستان میں سپردخاک کردیا گیا ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق ملزمان نے 8 ماہ میں 13 معصوم کلیوں کو بے دردی کے ساتھ مسل ڈالا ہے۔ پولیس آج تک ملزمان کا سراغ لگانے میں کامیاب نہ ہو سکی۔ فرانزک رپورٹ اور دیگر پہلوؤں پر صرف کاغذی کارروائیاں تو کی جا رہی ہیں مگر مثبت پہلو آج تک سامنے نہیں آئے۔ قاتلوں کی آزادی قصور پولیس کی کارکردگی پرسوالیہ نشان ہے۔ شہریوں نے واقعات کی روک تھام کیلئے وزیراعلیٰ پنجاب سے نوٹس لینے اور ملزمان کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: