سازش یا نااہلی، ایف 22کے بعد ایف35اور اب امریکی طیارے ایف 18بھی ناکام

امریکی ایئر فورس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ماہرین آکسیجن کی فراہمی کے مسئلے کاجلد ہی حل تلاش کر لیں گے جس کا پائلٹوں کو سامنا کرنا پڑرہا ہے۔۔  پیسفک فلیٹ کمانڈر ایڈمرل اسکاٹ سوئفٹکی کے مطابق “اب تک امریکی ماہرین جیٹ طیاروں میں نقص  کا پتہ لگانے میں ناکام رہے ہیں جو ہمارے لیے ایک چیلنج سے کم نہیں ۔۔ یاد رہے یہ صرف پہلی دفعہ نہیں کہ امریکی لڑاکا جہازوں کو آکسیجن کی کمی کاسامنا کرنا پڑا بلکہ اس سے پہلے بھی ایف 22 کے کاک پٹ میں آکسیجن کی کمی کے باعث پائلٹوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ جس کے بعد دنیا کے سب سے مہنگے اور جدید جنگی جہازوں کو حفاظتی اقدامات کے طور پر گرائونڈ کرنے کے احکامات جاری کئے گئے ہیں۔ دوسری جانب امریکہ کےجدید لڑاکا طیارے ایف 35 بھی آکسیجن کی کمی کے باعث گراﺅنڈ کر دیے گئے تھے۔ طیاروں کو گراﺅنڈ کرنے کی وجہ پائلٹ کے لیے آکسیجن کی فراہمی کے نظام کی خرابی ہی تھا جبکہ طیارہ ساز کمپنی لاک ہیڈ مارٹن کے مطابق وہ اس مسئلہ کے حل میں ایئر فورس کی مدد کریں گے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.