اسرائیلی فوج نے مسجد اقصی میں3فلسطینیوں کوشہیدکردیا

اسرائیلی فوج نے مسجد اقصیٰ کے صحن میں فائرنگ کر کے تین فلسطینی شہریوں کو شہید کردیا۔ واقعہ کے بعد مسجد بند،، نمازجمعہ بھی ادا نہ کرنے دی۔

اسرائیلی حکام کے مطابق تینوں فلسطینیوں نے مسجد سے باہر نکل کر پولیس پرفائرنگ کی جس سے2 اہلکارمارے گئے۔ واقعہ کےبعد پولیس اور حملہ آوروں کے درمیان مسجد اقصی کے صحن میں مسلح جھڑپ ہوئی اور اُم الفحم شہرسےتعلق رکھنےوالے 29 سالہ محمد احمد جبارين، 19 سالہ محمدعبداللطيف جبارين اور محمداحمد مفضل جاں بحق ہوگئے۔ واقعہ کے فورا بعد قابض اسرائیلی فوج نےمسجدِ اقصی کو بند کردیا اور بیت المقدس شہرکے اولڈٹاؤن کی مکمل ناکا بندی کرکےاسےباقی شہر سےعلیحدہ کردیا۔ اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصیٰ کو بھی بند کر کے اس کے 12 محافظوں کو حراست میں لے لیا اور نمازجمعہ کی ادائیگی نہ ہونےدی۔ 1969میں مسجد اقصی میں آتشزدگی کے واقعے کے بعد یہ دوسرا موقع ہے جب یہاں نماز جمعہ کے اجتماع کو روک دیا گیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.