جنوبی کوریا:کُتوں کےمعاملہ پرحکومت اور ریسٹورنٹ مالکان میں ٹھن گئی

جنوبی کوریا: جنوبی کوریامیں سرمائی اولمپکس کےموقع پر حکومت اورریسٹورنٹس مالکان میں کتےکےگوشت سےتیارکردہ ڈشزکولےکر کا فی تناؤ پایا جاتا ہے کیونکہ اولمپکس کےدوران مختلف ممالک کےکھلاڑی اورمندوبین جنوبی کوریامیں موجودہیں اوراس وجہ سےکتوں سےتیارکردہ ڈشز کےایشوپرکافی آوازیں اٹھ رہی ہیں جس کےباعث حکومت نے ریسٹورنٹس مالکان سےدرخواست کی ہے کہ وہ کم ازکم اولمپکس کےدوران اپناکام بندکردیں لیکن ریسٹورنٹس مالکان اپنی ضد پر اڑے ہوئےہیں اور انہوں نےحکومتی درخواست کو رد کرتے ہوئے کام جاری رکھنےکااعلان کیاہے۔ کورین حکومت نےکام کی بندش کےدوران نقصان کاازالہ کرنےکابھی آپشن دیاہےلیکن ریسٹورنٹس مالکان ,,میں نہ مانو،،کی رٹ لگائے بیٹھے ہیں۔ایک رپورٹ کےمطابق کورین ریسٹورنٹس میں کتے کےگوشت سےتیارکردہ ڈشزسب سےزیادہ پسندکی جاتی ہیں اور ہرسال 10لاکھ کتےکورین باشندوں کےچٹخاروں کےبھینٹ چڑھ جاتے ہیں ۔

 

شاید آپ یہ بھی پسند کریںمصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: