شام پر امریکی اور اتحادیوں کےحملے پر عالمی برادری تقسیم

چین ، روس اور ایران سمیت کئی ممالک نے امریکہ کے شام حملے کے اقدام کی مخالفت کرتے ہوئے اسے عالمی قوانین کی خلاف ورزی قرار دے دیا ہے،  چین کا مزید کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کی اجازت کے بغیر کسی بھی عسکری کارروائی کو چین غیر قانونی سمجھتا ہے۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے کہا کہ پھر سے سرد جنگ کا آغاز ہوگیاہے، فریقین کو چاہئے کہ وہ کشیدگی کو کم کرنے کے لیے کردار ادا کریں۔ روسی صدر نے خبردار کیا کہ پناہ گزینوں کی نئی لہر یورپ کا رخ کرے گی۔ امریکہ اور اتحاد حق پر ہوتے تو کیمیائی حملوں کے نتائج کا انتظار کرتے۔  برطانوی اپوزیشن لیڈر جیری می کوربن نے کہا کہ  شام پر حملے کا کوئی قانونی جواز نہیں تھا، جرمنی نے شام کے معاملے پر جونیوا امن مذاکرات کو بحال کرنے پر زور دیا۔ ادھر ترک صدر طیب اردگان نے کہا کہ کیمیائی حملوں کے بعد شام پر میزائل حملہ مناسب تھا۔ سعودی عرب، اسرائیل اور قطر نے بھی بشارالاسد کے خلاف کارروائی کی بھرپور حمایت کی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

%d bloggers like this: