ترکی میں ناکام فوجی بغاوت کا ایک سال مکمل

15جولائی2016 کی رات  ترک صدر طیب اردوان اورجمہوریت سے نالاں فوج کےایک گروپ نےاہم سرکاری عمارتوں پرقبضہ کرکے بغاوت کا اعلان کیا، یہ وہ وقت تھا جب صدر ارودوان بیرونی دورے سے واپسی پر ترکی کی فضاؤں میں ابھی  داخل نہیں ہوئے تھے۔

اطلاع ملتےہی  طیب ارودوان نےترک عوام کےنام اپنےپیغام میں جمہوریت کو بچانے کیلئے گھروں سے نکلنےاور بغاوت کو ناکام بنانے کی اپیل کی، صدر کا پیغام سوشل میڈیا پر وائرل ہوتے ہی عوام بڑی تعداد میں گھروں سے باہر نکل آئے اورسڑکوں پر دوڑتے بھاری بھرکم فوجی  ٹینکوں کےآگےلیٹ گئے.ہردلعزیزصدرکی اپیل پرنہتےترک عوام نےمسلح فوجیوں سےگنیں چھین لیں،ریڈیو، ٹی وی اسٹیشن، صدارتی محل، فوجی ہیڈکوارٹراور دیگراہم سرکاری عمارتوں پرقابض فوجی اہلکاروں  کوغیر مسلح کرکے حراست میں لے لیاگیا.

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.